25

زمبابوے کے خلاف سیریز کیلئے پاکستان کرکٹ ٹیم مینجمنٹ کا اعلان

منصور رانا ٹیم منیجر، مصباح الحق ہیڈ کوچ اور بولنگ کوچ وقاریونس کو مینجمنٹ میں شامل کیا گیا ہے۔ فزیوتھراپسٹ کلف ڈیکن اور فیلڈنگ کوچ  بدالمجید بھی مینجمنٹ کا حصہ بن گئے ہیں۔

اسی طرح اسٹرنٹھ اینڈ کنڈیشنگ کوچ یاسرملک اور اسسٹنٹ ٹوہیڈ کوچ شاہداسلم بھی مینجمنٹ میں شامل کردیے گئے ہیں۔ میڈیامنیجر رضا راشد  اور ملنگ علی مساجر بھی مینجمنٹ  میں شامل ہیں۔

ذرائع کے مطابق سابق کھلاڑی  یونس خان اور مشتاق احمد کو مینجمنٹ میں شامل نہیں کیا گیا ہے۔ یونس خان کو دورہ نیوزی لینڈ کے لیے مینجمنٹ میں شامل کیے جانے کا امکان ہے۔ یونس خان دورہ انگلینڈ کے لیے بیٹنگ کوچ مقرر کیے گئے تھے۔

خیال رہے کہ زمبابوے کرکٹ ٹیم کا 20 رکنی اسکواڈ اور اسٹاف پاکستان کے دورے پر پہنچ گئی ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) حکام نے مہمان ٹیم کا ااسلام آباد یئرپورٹ پر استقبال کیا۔ پاکستان کرکٹ کونسل ذرائع کے مطابق زمبابوے ٹیم  کے کھلاڑی 21 اکتوبر سے 27 اکتوبر تک اسلام آباد میں قرنطینہ میں گزاریں گے۔

ذرائع کے مطابق پاکستان اور زمبابوے کے درمیان تین ون ڈے میچز کی سیریز کا آغاز 30 اکتوبر سے راولپنڈی اسٹیڈیم میں ہوگا۔ دوسرا ون ڈے یکم نومبر، تیسرا ون ڈے 3 نومبر کو راولپنڈی اسٹیڈیم میں ہی کھیلا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق پانچ نومبر کو زمبابوے کرکٹ ٹیم لاہور پہنچے گی۔ 7 نومبر کو پہلا ٹی ٹونٹی، 9 نومبر کو دوسرا اور 10 نومبر کو آخری ٹی ٹونٹی میچ ہوگا۔ زمبابوے کرکٹ ٹیم 12 نومبر کو اپنے وطن واپس روانہ ہوگی۔

یاد رہے کہ اس سے قبل زمبابوے کرکٹ ٹیم کے دورہ پاکستان سے قبل ہیڈ کوچ مصباح الحق نے قومی کرکٹ ٹیم کا اعلان کر دیا تھا۔

فخر زمان، حیدر علی، حارث سہیل، امام الحق، خوشدل شاہ اور محمد حفیظ کو زمبابوے کے دورہ پاکستان کے لیے اسکواڈ کا حصہ بنایا گیا ہے۔

لاہور میں پریس کانفرنس کے دوران مصباح الحق نے بتایا تھا کہ روحیل نذیر، محمد رضوان، عثمان قادر، ظفر گوہر کو پاکستان بمقابلہ زمبابوے سیریز کے لیے ٹیم کا حصہ بنایا گیا ہے۔

موسیٰ خان، شاہین شاہ آفریدی، محمد حسنین اور وہاب ریاض کو بھی قومی اسکواڈ میں شامل کیا گیا ہے۔

پریس کانفرنس کے دوران مصباح الحق کا کہنا تھا کہ چاہتے ہیں سرفراز احمد فرسٹ کلاس میں پرفارم کریں اور پھر کم بیک کریں، جن کھلاڑیوں کو ڈراپ کیا گیا انہیں آئندہ موقع دیں گے۔

انہوں نے کہا تھا کہ شرجیل خان کے لیے انٹرنیشنل پروگرام دینا چاہتے ہیں۔ فٹنس پر کام کرنا ہوگا، نوجوان کھلاڑیوں کو اپنے ساتھ لیکر چل رہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں