18

شادی ہالز مخصوص شہروں میں بندہوں گے،گائیڈلائنز جاری

این سی او سی کے مطابق شادی کی تقریبات کے متعلق گائیڈلائنزکانفاذ20نومبرسےمخصوص شہروں کے مخصوص علاقوں پر ہوگا۔

پنجاب کے7 اور سندھ کے2شہروں میں شادی گائیڈ لائنز نافذالعمل ہوں گی۔ بلوچستان1 اور خیبرپختونخوا کے بھی1 شہر میں گائیڈ لائنز کا اطلاق ہوگا۔

شادی کی تقریب کا انعقاد اور جگہ کا انتخاب لوکل ہیلتھ اتھارٹی کی مشاورت سےہوگا۔ شادی کی ان ڈورتقریب پرپابندی ہوگی اور صرف آوَٹ ڈورکی اجازت دی جائے گی۔

این سی او سی کے مطابق مارکیزمیں شادی کی تقریب کےانعقاد کی اجازت نہیں ہوگی۔ شادی کی آؤٹ ڈورمیں کنوپی ٹینٹ کا استعمال بھی ممنوع ہوگا۔

آؤٹ ڈورشادی تقریب میں ایک ہزارمہمان شرکت کرسکیں گے اور شرکا کےمابین6فٹ کا فاصلہ رکھنا لازمی ہوگا۔

شادی کی تقریب کا میزبان کورونا ایس اوپیز پرعملدرآمدکا ذمہ دارہوگا۔ تقریب کا دورانیہ 2گھنٹے ہوگا اور رات 10بجے تقریب ختم کرنا ہوگی۔

ہرمہمان کےلیےماسک پہننالازم ہوگا۔ شادی میں شریک ہرمہمان کوماسک اور ینی ٹائزرمیزبان فراہم کرے گا۔

ملک کے 13 شہروں میں مزید کورونا کیسز پھیلنے کا خدشہ ہے۔ صوبائی حکومتوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ  بازاروں، شاپنگ مالز، پبلک ٹرانسپورٹ، ریسٹورنٹس میں ایس او پیز اور ماسک کو لازم قرار دیں۔

پاکستان میں اسی فیصد کورونا کیسز گیارہ بڑے شہروں سے رپورٹ ہوئے ہیں۔ کورونا وائرس کی دوسری لہر سے نمٹنے کے لیے ایس اوپیز پر سختی سےعمل کرنا ہوگا۔ احتیاطی تدابیر پرعمل پیرا ہو کر ہم کورونا کی دوسری لہرسے نمٹ سکتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں