23

پنجاب کابینہ اجلاس: گنے کی کم ازکم امدادی قیمت 200 روپے فی من کرنے کی منظوری

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی زیرصدارت پنجاب کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں کابینہ نے ٹرانسپورٹیشن چارجز اور شوگرکین ڈویلپمنٹ فیس کی بھی منظوری دی ہے۔

اجلاس میں چینی کے نرخوں میں مزید کمی میں موثر اقدامات جاری رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

گندم کی قیمت 1500 اور گنے کی قیمت 300روپے فی من کی جائے،کسان اتحاد

پنجاب کابینہ کے اجلاس میں مزید درآمدی چینی کی خریداری کے لیے کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایت کی گئی ہے جو چینی اسٹاک کا جائزہ لےکر حتمی سفارشات کا جائزہ لے گی۔

اجلاس میں گنے کے کاشتکاروں کو بروقت اور پورا معاوضہ دیا جائے گا، بروقت ادائیگیاں نہ کرنے والی شوگر ملز کے خلاف کارروائی ہو گی۔

واضح  رہے کہ پاکستان کسان اتحاد نے گندم کا ریٹ 1500 روپے من اور گنے کا کم ازکم 250 سے 300 روپے من کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔

یہ مطالبہ لاہور میں پاکستان کسان اتحاد کے مرکزی صدر خالد محمود کھوکھر نے چیف سیکرٹری پنجاب سے ملاقات میں کیا ۔

اس موقع پر چیف سیکرٹری پنجاب یوسف نسیم کھوکھر نے کہا ہے کہ گنے گندم وغیرہ کے ریٹ سمیت حکومت کسانوں کے جملہ مسائل پر سنجیدگی سے غور کر رہی ہے۔سٹیک ہولڈر کو تفصیلی سنا جا چکا ہے۔

انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت کسانوں کے مسائل کے حل کے حوالے سے وفاقی حکومت سے مکمل رابطے میں ہے۔ حکومت زراعت کی اہمیت اور کسانوں کے مسائل سے بھی آگاہ ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں