12

مزید 2 تعلیمی اداروں میں کورونا کیسز رپورٹ

ضلعی انتظامیہ کے مطابق اسلام آباد ماڈل کالج فارگرلز جی نائن ٹو میں 2 اور اسلام آباد ماڈل کالج فار گرلز اسٹاف کالونی جی فائیو میں 2 کیسز رپورٹ ہوئے۔

ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر اسلام آباد نے کورونا کیسز رپورٹ ہونے والے تعلیمی اداروں کو سیل کرنے کے مراسلے جاری کردیے ہیں۔

خیال رہے کہ اسلام آباد میں  کورونا وائرس کیسز رپورٹ ہونے پر 151 تعلیمی اداروں کو  کیا جاچکا ہے۔

اس سے قبل وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کی زیر صدارت بین الصوبائی وزرائے تعلیم کے اجلاس میں کورونا وائرس کے باعث ملک بھر میں تعلیمی ادارے ایک مہینہ بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود  نے اعلان کیا کہ 26 نومبر سے 24 دسمبر تک ملک بھر کے تعلیمی اداروں کو بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

شفقت محمود نے بتایا کہ ملک بھر میں تعلیمی ادارے  آن لائن  کلاسز  کا انعقاد کریں گے اور 11 جنوری سے ملک بھر کے تعلیمی ادارے دوبارہ کھول دیے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ کورونا کے باعث تمام  امتحانات ملتوی کردیئے گئے ہیں جبکہ دسمبر میں ہونے والے امتحانات کو بھی ملتوی کر دیا گیا ہے۔

وفاقی وزیر تعلیم کا کہنا تھا کہ یونیورسٹی  ہاسٹلز کے طلبہ کی ایک تہائی حصہ ہاسٹلز میں قیام کرسکیں گے، ووکیشنل اداروں کو بند نہیں کررہے، ووکیشنل اداروں میں تربیت کا عمل جاری رہے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ مارچ یا اپریل میں ہونے والے بورڈ کے امتحانات  کو مئی میں کرانے کی سفارش کی گئی ہے۔

ذرائع ہم نیوز کے مطابق وفاقی حکومت نے تعلیمی ادارے ایک ماہ کے لیے بند کرنے کی تجویز دی جس سے تمام صوبوں کے وزرائے تعلیم نے اتفاق کیا۔

ہم نیوز کے ذرائع کے مطابق اجلاس میں اسکولوں کی بندش کے دورانیے پر گفتگو کی گئی اور کورونا کی صورت حال کا جائزہ لیا گیا۔ ۔

اس موقع پر وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہا کہ اساتذہ اور بچوں کی صحت سب سے پہلے ہے، صحت پر کوئی سمجھوتہ نہیں کرسکتے۔

وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کی زیر صدارت بین الصوبائی وزرائے تعلیم کا اجلاس نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر میں ہوا۔

قبل ازیں بین الصوبائی وزرائے تعلیم کا ایک اجلاس 16 نومبر کو ہوا تھا اور وزارت تعلیم نے کورونا کیسزبڑھنے پر  تعلیمی اداروں سے متعلق تجاویز صوبوں کو بھجوائی تھیں۔

 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں