19

موسیقی کے بے تاج بادشاہ راحت فتح علی خان 46 برس کے ہو گئے

پاکستان کے نامور گلوکار استاد راحت فتح علی خان 9 دسمبر 1974 کو فیصل آباد میں پیدا ہوئے۔ وہ ایک پاکستانی موسیقار اور گلوکار ہیں جبکہ وہ بنیادی طور پر پنجابی قوالی کے ایک گلوکار ہیں۔

راحت فتح علی خان کے والد کا نام فرخ فتح علی خان ہے اور وہ استاد نصرت فتح علی خان کے بھتیجے ہیں۔

راحت فتح علی خان قوالی کے علاوہ غزل اور ہلکی پھلکی موسیقی بھی گاتے ہیں۔ وہ بڑے پیمانے پر پاکستان، بھارت کے ساتھ ساتھ دنیا بھر کا دورہ کر کے اپنی کارکردگی کا مظاہرہ کر چکے ہیں۔

پاکستان کے نامور گلوکار استاد راحت فتح علی خان کو 2019 میں آکسفورڈ یونیورسٹی کی جانب سے موسیقی کے شعبے میں پی ایچ ڈی کی ڈگری سے نوازا گیا، انہوں نے اپنے ملک اور خاندان کا نام پوری دنیا میں روشن کیا۔

موسیقی کے گھرانے میں آنکھ کھولنے کی وجہ سے سُر، سنگیت اور راگنیاں ان کی گھٹی میں شامل ہوتی گئیں۔ راحت فتح علی خان کم عمری ہی سے اپنے چچا استاد نصرت فتح علی خان کے ساتھ سماع کی محفلوں میں سنگت کرنے لگے تھے۔ اس زمانے کی تربیت آج استاد راحت فتح علی خان کے قدم قدم پر کام آ رہی ہے۔

2013 میں بالی وڈ کی اداکارہ و پروڈیوسر پوجا بھٹ نے اپنی فلم ’’پاپ‘‘ میں راحت فتح علی خان کی آواز میں ایک گیت ’’من کی لگن‘‘ شامل کیا تو ہر طرف ان کی آواز کی دھوم مچ گئی۔

2013 سے شروع ہونے والا یہ سفر آج بھی بالی وڈ میں پوری توانائی اور مقبولیت کے ساتھ جاری ہے۔ علاوہ ازیں انہوں نے کئی پاکستانی ڈراموں کے ٹائٹل سونگ بھی گائے جنہیں بے حد پسند کیا گیا۔

دسمبر 2014ء میں اوسلو میں منعقدہ نوبیل پیس پرائز کی تقریب میں صُوفیانہ کلام پیش کر کے پاکستان کا نام عالمی سطح پر روشن کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں