18

پمز ملازمین کا احتجاج 20ویں روز بھی جاری 

ایم ٹی آئی آرڈیننس کے خلاف ملازمین کا پمز اسپتال کے باہر احتجاج جاری ہے۔

ڈاکٹر اسفندیار نے ہم نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم پر کورونا آئسولیشن وارڈز میں کام کرنے والے اسٹاف کا دباوَ بڑھ رہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ حکومت کو پیغام دینا چاہتے ہیں کہ ہمیں مجبور نہ کیا جائے۔

ڈاکٹر اسفندیار نے کہا کہ پیر کے دن سے تمام ملازمین کی حاضری گراوَنڈ میں لگائی جائے گی، پمز کے احتجاجی ملازمین اسپتال سے نکل کر ترامڑی چوک کی جانب روانہ ہو گیا۔

پمز کو میڈیکل ٹیچنگ انسٹیٹیوٹ (ایم ٹی آئی) آرڈیننس کے ذریعے بورڈ آف گورنرز کے ماتحت کرنے کے خلاف پمز اسپتال کے ڈاکٹرز اور ملازمین 20 روز سے احتجاجی مظاہرہ کر رہے ہیں۔

حال ہی میں صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی جانب سے ایم ٹی آئی آرڈیننس جاری کیا گیا جس کے تحت پمز کو میڈیکل ٹیچنگ انسٹیٹیوٹ (ایم ٹی آئی) میں تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا جس کے خلاف اسپتال ملازمین احتجاج کررہے ہیں۔

ملازمین کا موقف ہے کہ پمز کو ایم ٹی آئی میں تبدیل کرنے سے ان کے حقوق اور مراعات ختم ہوجائیں گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں