3

وزیراعظم سے آج ملاقات متوقع ہے، امید ہے پی ٹی آئی ساتھ دے گی: جام کمال

ہم نیوز کے مطابق وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں میڈیا سے بات چیت میں انہوں نے کہا کہ ہم وفاق میں پاکستان تحریک انصاف کے ساتھ ہیں اور وہ صوبے میں ہمارے ساتھ ہے۔

اسلام آباد آمد کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ ماحولیات سے متعلق اجلاس میں شرکت کے لیے وفاقی دارالحکومت آیا ہوں۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ کچھ ارکان پی ڈی ایم کا حصہ بن کر بلوچستان حکومت گرانا چاہتے ہیں۔

وزیراعلیٰ جام کمال نے الزام عائد کیا کہ ناراض اراکین نے ٹھان لی ہے کہ مسائل حل نہیں کرنا ہیں۔ انہوں نے واضح طور پر کہا کہ  بلوچستان میں عدم استحکام کوئی نہیں چاہتا ہے۔

جام کمال نے کہا کہ شروع میں اختلافات سامنے آئے تو صادق سنجرانی سمیت سب بلوچستان آئے۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت تاثر دیا گیا کہ اکثریت ہمارے خلاف ہے۔

وزیراعلیٰ جام کمال نے کہا کہ تحریک عدم اعتماد پر 14 اراکین کے دستخط ہیں لیکن پریس کانفرنس میں 6 سے 7 اراکین ہوتے ہیں۔

وزیراعلیٰ بلوچستان نے اس حوالے سے کہا کہ ہو سکتا ہے کہ ارکان سے دستخط چند روز پہلے لیے گئے ہوں۔ انہوں نے کہا کہ صادق سنجرانی مسائل حل کرنے پر توجہ دے رہے  ہیں۔

ہم نیوز کے مطابق وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال نے کہا کہ کچھ اراکین نے کہا ہے کہ وہ مجبوری میں دوستوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اراکین کا یہ بھی کہنا ہے کہ ہمارے حلقوں میں مداخلت کی جارہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں